Imran Khan Interview after Qasim Ali Shah

قاسم علی شاہ پاکستان کے مشہور و معروف موٹیوشنل سپیکر کو لینے کے دینے پڑھے گئے یو ں تو وہ پاکستان میں بلندیوں کو چھو رہے تھے لیکن اب جب قاسم علی شاہ نے یہ سوچا کہ میں ایک موٹیوشنل سپیکر ہو ،اور میرے لاکھوں نہیں بلکہ کروڑں فین ہیں اور اس سوچ کو مد نظر رکھتے ہوئے عمران خان سے انٹرویو لینے پہنچ گئے۔

قاسم علی یہ نہیں جانتے تھے کہ وہ اس شخص کا انٹرویو لینے جار ہے ہیں جس کی پوری دنیا تقریر کو نہ صرف سنتی ہے بلکہ اس پر عمل بھی کرتی ہے اس لیے کہتے ہیں کچھ کرنے سے پہلے سوچ لینا اور کسی کے بارے میں جان لینا بہت ضروری ہے بہرحال قاسم علی شاہ خود کو لوگوں کی زندگی بدلنے والا رہنما سجمھ کر عمران خان سے سوالات کا آغاز کردیا اس دوران وہ صوفہہ پر ٹھیک سے بیٹھ بھی نہ سکے۔

قاسم علی شاہ عمران خان سے گفتگو کرتے ہوئے ڈرے ہوئے اور سمہے ہوئے انداز میں نظر آئے اور اسی دوران انہوں نے عمران خان کے پاس رکھے ایک ڈبے میں سے ٹشوپیپر کو بھی اٹھا لیا اور بجائے اس کے وہ ٹشو پیپر کو استعمال کرتے انہوں نے اس کو اپنی جیب میں رکھ لیا۔ جس کے بعد عمران خان کے چاہنے والوں نے ان کو یہ بھی لقب دیا کہ یہ ٹشو پیپر چور ہیں۔

ابھی یہ بات ختم نہیں ہوئی تھی کے قاسم علی نے عمران خان کو کہا کہ مجھے پاکستان میں الیکشن لڑنے کے لیے ایک ٹکٹ چاہیے ۔ عمران خان شہزادہ لیڈر ہے اور اس لیڈر نے انکار نہ کیا اور ٹکٹ کے لیے ہاں کردی ۔ لیکن یہ ظرف ہی تھا کہ عمران خان نے اس شخص کو انٹرویو دینے سے انکار نہ کیا اور باہر جا کر قاسم علی شاہ نے عمران خان پر تیر کے نشتر چلا دیے جس کے بعد شوشل میڈیا پر قاسم علی شاہ کو لینے کے دینے پڑھ گئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *